اللہ اور رسول اللہ صلی اﷲعلیہ وآلہ وسلم کی تعلیمات کو مسلمان سمجھ جاتے تو آج یہ حالت نہ ہوتی مسلمان در در کی ٹھوکریں نہ کھاتے ،محمد غالب

برمنگھم سید مودودی فاونڈیشن کے چیئرمین محمد غالب نے مسلمانوں کو ربیع الاول کے اس بابرکت ماہ کی مبارک باد دیتے ہوے کہا کہ اللہ کا کلام اور سیرت رسول اللہ صلی اﷲعلیہ وآلہ وسلم سب سے پہلے مسلمان حکمرانوں کو سمجھنے کی ضرورت ہے سید مودودی نے آسان زبان میں سمجھانے کی کوشش کی ہے جسے مسلمان نہیں سمجھ سکے غیر مسلموں نے اللہ کے نظام کو صیح سمجھا ہے یورپین ممالک نے اپنے ملکوں میں کافی حد تک نافذ بھی کیا ہے عام آدمی کے لیے روٹی کپڑا اور مکان کا انتظام کیاہے انسانوں کے بنائے ہوئے قوانین میں انصاف کا دامن نہیں چھوڑا مگر مسلمانوں کی حالت پر رحم آتا ہے۔ عام لوگ زندگی کی بنیادی ضروریات سے بھی محروم ہیں حکمرانوں اور عام لوگوں کی زندگیوں کتنا فرق ہے غریب لوگ کچرے کے ڈیر سے روٹی کے ٹکرے تلاش کر رہے ہیں کی یہی رسول اللہ صلی اﷲعلیہ وآلہ وسلمکی آمد اور سیرت کا پیغام ہے۔ انہوں نے کہ مسلمانوں کے پاس تمام قدرتی واسائل ہونے کے باوجود قرضہ لے گذارہ کیا جا رہا مسلمانوں کا رسول اللہ صلی اﷲعلیہ وآلہ وسلم کی سیرت کے مطابق کوئی سیاسی اور معاشی نظام نہیں ہے علمائکرام کی ذمداری ہے کہ میلاد النبی رسول اللہ صلی اﷲعلیہ وآلہ وسلم کے اس بابرت مہنے میں مسلمانوں کو اللہ کے پورے نظام کی جانب متوجہ کریں جس میں ہر سطح پر انصاف ہے ۔ محمد غالب نے کہ کہا سید مودودی نے اسلام کے پورے نظام کی تحقیق کی اس پر کہیں کتابیں لکھیں رسول اللہ صلی اﷲعلیہ وآلہ وسلم کی سیرت کے کہیں پہلووں کو اجاگر کیا اللہ نے مسلمانوں کو زکات کا ایسا نظام دیا جس پر عمل درآمد سے معاشی مسائل اور مشکلات کو حل کرنے مدد مل سکتی ہے مگر اس کو قائم کرنے کے لیے دیانتداراور باصلاحیت قیادت کو سامنے لانے کی ضرورت ہے جو بدقسمتی سے ابھی تک مسلم ممالک کو میسر نہیں ہوسکی اللہ اور رسول اللہ صلی اﷲعلیہ وآلہ وسلم کی تعلیمات کو مسلمان سمجھ جاتے تو آج یہ حالت نہ ہوتی مسلمان در در کی ٹھوکریں نہ کھاتے بے شمار وسائل ہونے کے باوجود دنیا کے سامنے ہاتھ نہ پھیلاتے اور ذلیل و خوار نہ ہوتے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *